دنیا کی مشہور کرکٹ لیگز اور چند دلچسپ حقائق٬ ویڈیو

(Saleem Ullah Shaikh, Karachi)

کرکٹ اس وقت دنیا بھر میں دوسرے نمبر پر سب سے زیادہ کھیلا جانے والا کھیل ہے۔ دنیا بھر میں ہر وقت کہیں نہ کہیں کوئی نہ کوئی کرکٹ کا بین الاقوامی ٹورنامنٹ ، کوئی لیگ یا کوئی سیریز ضرور کھیلی جارہی ہوتی ہے خواہ وہ ٹیسٹ کرکٹ ہو، ایک روزہ میچز ہوں یا ٹی ٹوئنٹی کرکٹ۔ اس وقت پاکستان سپر لیگ کا آغاز ہوچکا ہے۔ پورا پاکستان اس کے سحر میں گرفتار ہے اور لوگ اس کے میچز میں غیر معمولی دلچسپی لیتے ہیں۔ سپر لیگ کی بات چلی ہے تو پھر دنیا بھر میں ہونے والے کچھ دلچسپ بین الاقوامی ٹورنامنٹ یا لیگز کا ذکر ہوجائے۔
 


کاؤنٹی کرکٹ :
کاؤنٹی کرکٹ کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں ہے۔ یہ انگلینڈ کی مختلف کاؤنٹیز کے مابین ہونے والے مقابلے ہیں اسی مناسبت سے اس کو کاؤنٹی کرکٹ کہا جاتا ہے۔ اگرچہ مختلف کاؤئنٹیز کے درمیان مقابلے تو سترہویں صدی عیسوی سے ہی ہوتے رہتے تھے لیکن اس کا باقاعدہ آغاز1890 سے ہوا۔ یہ کرکٹ کی قدیم ترین بین الاقوامی لیگ کہی جاسکتی ہے۔اس میں دنیا بھر کے کھلاڑی حصہ لیتے ہیں۔کاؤنٹی کرکٹ کھیلنا کسی بھی کھلاڑی کے لیے اعزاز کی بات سمجھی جاتی ہے۔ کاؤنٹی کرکٹ تین روزہ میچز پر مشتمل ہوتی ہے۔ پاکستان کے کئی نامور کھلاڑی کاؤنٹی کرکٹ کھیل چکے ہیں۔


ورلڈ سیریز کرکٹ:
ورلڈ کرکٹ سیریز جس کو کیری پیکر کرکٹ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ یہ وہ سیریز تھی جس نے کرکٹ کے کھیل کا انداز ہی بدل دیا۔ رنگین کپڑے، نائٹ کرکٹ، بیش بہا معاوضے نے اس کو پرکشش بنا دیا تھا اور اس کے بعد کھلاڑی باقاعدہ پیشہ ور کھلاڑی بن گئے۔ یہ سیریز 1977تا 1979 کھیلی گئی۔ اس میں آسٹریلیا، انگلینڈ، پاکستان ، ساؤتھ افریقہ اور ویسٹ انڈیز کے نامور کھلاڑی شامل تھے۔اس کے آغاز کی کہانی بڑی دلچسپ ہے۔ کیری پیکر آسٹریلین میڈیا کا ایک بہت بڑا نام تھا۔ انہوں نے اپنے ٹی وی چینل ’’ چینل 9‘‘ کے لیے آسٹریلیا کرکٹ بورڈ سے 1976 کی ٹیسٹ سیریز کے نشریاتی حقوق خریدنے چاہے لیکن کرکٹ آسٹریلیا نے ان کی یہ پیش کو رد کردیا۔ اس کے بعد انہوں نے ازخود ایک سیریز منعقد کرنے کا منصوبہ بنایا جس کے نتیجے میں ورلڈ کرکٹ سیریز منظر عام پر آئی۔


ٹوئنٹی 20 کپ :
یہ انگلینڈ اور ویلز کے کلبز کے درمیان کھیلی جاتی ہے ۔ اس کا آغاز 2003 سے ہوا۔اس میں 18 ٹیمیں حصہ لیتی ہیں جن کو چھے چھے کے تین گروپس میں تقسیم کیا گیا ہے۔اس کا موجودہ نام ٹی ٹوئنٹی بلاسٹ ہے۔


نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ:
یہ پاکستان میں کھیلی جاتی ہے اور اس کو پاکستان کرکٹ بورڈ کی سرپرستی حاصل ہے۔ یہ دنیا کی اولین ٹی 20 لیگز میں سے ایک ہے جو کہ2005سے کھیلی جارہی ہے۔ اس میں 17 مقامی ، ایک آزاد کشمیر اور ایک افغانستان کی ٹیم شامل ہوتی ہے۔


انٹر پروونشنل ٹی 20 سری لنکا:
یہ سری لنکا کی لیگ ہے۔ اس میں سری لنکا کے چار صوبوں کی نمائندگی کرتی ہے اور ایک اسکول الیون اس میں شامل ہوتی ہے۔ یہ بھی کافی پرانی لیگ ہے اور پاکستانی نیشنل لیگ کے چند ماہ بعد اس کا آغاز ہوا ہے-


انڈین کرکٹ لیگ:
انڈین کرکٹ لیگ کا آغاز 2007میں ہوا۔یہ زی انٹر ٹینمٹ کی جانب سے کی گئی ایک کوشش تھی۔ یہ لیگ دو سیزن کے بعد ختم ہوگئی۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ انڈین کرکٹ بورڈ نے اس کو کرکٹ لیگ ماننے سے انکار کردیا تھا، جب کہ آئی سی سی نے اس کی منظوری انڈین بورڈ کی رضامندی سے مشروط کردی تھی۔۔ اس لیگ میں نو ٹیمیں مقامی کھلاڑیوں یعنی بھارت کے مختلف شہروں سے تعلق رکھتی تھیں، چار بین الاقوامی ٹیمیں( انڈیا، پاکستان ، بنگلہ ڈیش اور ورلڈ الیون کے کھلاڑیوں پر مشتمل تھیں ) یہ ٹی 20 فارمیٹ والی لیگ تھی لیکن اس کے شیڈول میں 50اوورز کے میچز بھی شامل تھے۔ انڈین بورڈ کی سرپرستی نہ ہونے کے باعث یہ لیگ دم توڑ گئی۔


انڈین پریمئیر لیگ:
انڈین کرکٹ لیگ کے بعد اگلے سال یعنی 2008میں انڈین پریمئر لیگ کا آغاز ہوا۔ جو کہ تاحال جاری ہے۔ بنیادی طور پر یہ انڈین کرکٹ لیگ کو غیر مؤثر کرنے کے لیے قائم کی گئی تھی ۔ انڈین کرکٹ لیگ کا آغاز 2007 کے وسط میں ہوا تھا ، اس کے بعد انڈین کرکٹ بورڈ نے ستمبر 2007 کو انڈین پریئمر لیگ کے قیام کا اعلان کیا اور اپریل 2008 کو اس کا پہلا ٹورنامنٹ یا سیزن منعقد کیا گیا۔


اسٹیفورڈ 20/0:
یہ جزائر غرب الہند( ویسٹ انڈیز ) کی مختلف ٹیموں کے مابین کھیلی جاتی ہے۔ اس کا آغاز 2006میں ہوا تھا۔ اس میں ابتدا میں 19 ٹیمیں تھیں جو کہ بڑھ کر 21ہوچکی ہیں۔


سپرا سمیش:
سپر اسمیش جس کا موجودہ نام برگر کنگ سپراسمپیش ہے۔ یہ نیوزی لینڈ کی مقامی ٹی ٹوئنٹی لیگ ہے۔ اس کی خاص بات یہ ہے کہ ویمنز کی بھی ٹی ٹوئنٹی منعقد کراتی ہے۔ اس کا آغاز 2005-2006میں ہوا ہے۔ یہ لیگ چھے ٹیموں کے مابین کھیلی جاتی ہے۔


بگ بیش:
یہ آسٹریلیا میں کھیلی جاتی ہے۔ پہلے یہ لیگ کے ایف سی بگ بیش کہلاتی تھی۔اس کا آغاز 2005 میں ہوا تھا۔پہلے اس میں صرف آسٹریلیا کے 6 مختلف شہروں کی ٹیمیں حصہ لیتی تھیں ۔ 2012 میں اس کا نام تبدیل کر کے بگ بیش کیا گیا اور ساتھ ہی اس کے فارمیٹ میں تبدیلی کی گئی ۔اب یہ آسٹریلیا کے آٹھ مختلف شہروں کی ٹیموں پر مشتمل ٹورنامنٹ ہے، جس میں بین الاقوامی کھلاڑی بھی حصہ لیتے ہیں۔


کیربیئن ٹوئنٹی 20:
یہ بھی ویسٹ انڈیز کی بین الاقوامی ٹی ٹوئنٹی لیگ ہے۔ اس کا آغاز 2010میں ہوا ہے۔ اس میں 7 مقامی ٹیمیں شامل ہیں جب کہ اس میں دیگر ممالک مثلاً کینڈا یا انگلینڈ کی مختلف کاؤنٹیز کو بھی شامل کیا جاتا ہے۔اب یہ لیگ کیربئین پریمئر لیگ کے نام سے جانی جاتی ہے۔


شپریزہ کرکٹ لیگ:
یہ افغانستان میں کھیلی جاتی ہے۔ اس کا آغاز 2013 میں ہوا ہے۔یہ لیگ 6 فرنچائز ٹیموں پر مشتمل ہوتی ہے۔ اس میں افغانستان کےعلاوہ بین الاقوامی کھلاڑی بھی حصہ لیتے ہیں۔


بنگلہ دیش پریمئیر لیگ:
یہ بنگلہ دیش میں کھیلی جاتی ہے۔ اس کا اہتمام بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کرتا ہے۔ اس کا آغاز 2012 میں ہوا ہے۔ یہ لیگ 7 ٹیموں پر مشتمل ہوتی ہے جس میں مقامی کھلاڑیوں کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی کھلاڑی بھی حصہ لیتے ہیں۔ یہ دنیائے کرکٹ کے اعلیٰ سطح کی لیگز میں سے ایک ہے۔


افریقہ ٹی ٹوئنٹی کپ :
یہ جنوبی افریقہ کرکٹ بورڈ کے زیر اہتمام کھیلی جاتی ہے۔ یہ ایک بین الااقوامی ٹورنامنٹ ہے۔ بنیادی طور پر یہ افریقی ممالک کی ٹیموں کے درمیان کھیلا جاتا ہے۔ اس کا آغاز 2015 میں ہوا تھا ۔اس میں 6 افریقی ممالک کی 20 ٹیمیں حصہ لیتی ہیں۔ اس میں ساؤتھ افریقہ، کینیا، زمبابوے،، نمیبیا، یوگنڈا اور نائجریا کی ٹیمیں شامل ہیں۔


ماسٹرز چیمپئن لیگ:
یہ لیگ 2016 میں متحدہ عرب امارات میں کھیلی گئی تھی۔اس کا انعقاد امارات کرکٹ بورڈ نے کیا تھا۔ اس میں 6 ٹیموں نے حصہ لیا تھا ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ ٹیمیں دنیا بھر کے سابق نامور کھلاڑیوں پر مشتمل تھیں۔


ہانگ کانگ ٹی ٹوئنٹی:
اس کا آغاز 2016 میں ہوا۔ جیسا کہ نام سے ظاہر ہے ۔ یہ ہانگ ہانگ کرکٹ بورڈ کی جانب سے منعقد کی جاتی ہے۔اس میں ہانگ کانگ کے کھلاڑیوں سمیت بین الاقوامی کھلاڑیوں پر مشتمل 5 ٹیمیں حصہ لیتی ہیں۔


مانسی سپر لیگ :
یہ ساؤتھ افریقہ کرکٹ بورڈ کی جانب سے منعقد کی گئی ہے۔ اس کا آغاز 2018میں ہوا ہے۔ اس میں ساؤتھ افریقہ کے مختلف شہروں کی چھے فرنچائز ٹیمیں شامل تھیں۔ جن میں بین الاقوامی کھلاڑی بھی شامل تھے۔


افغانستان پریمئیر لیگ:
یہ بھی افغانستان کی پریمئر لیگ ہے۔ اس کا آغاز 2018 میں ہوا اور یہ لیگ دبئی اور شارجہ میں کھیلی گئی ہے۔ اس اس میں افغانستان کے علاوہ دنیا بھر کے کھلاڑیوں پر مشمل 5 ٹیموں نے حصہ لیا تھا۔


گلوبل ٹی ٹوئنٹی کینیڈا:
اس ٹورنامٹ کا آغاز کینڈا میں 2018میں ہوا ہے۔ اس میں 6 فرنچائز ٹیموں نے حصہ لیا تھا۔ ہر ٹیم میں 4 کینڈیین کھلاڑی اور انٹرنیشنل کھلاڑیوں پر مشتمل تھی۔ اس کا اگلا سیزن رواں سال کھیلا جائے گا۔


کرناٹکا پریمئیر لیگ:
یہ بھارتی ریاست کرناٹک کی مقامی ٹی ٹوئنٹی لیگ ہے ۔ اس کا آغاز 2009 میں ہوا ہے۔یہ ٹورنامنٹ 7 ٹیموں کے مابین کھیلا جاتا ہے۔


تامل ناڈو پریمئیر لیگ:
تامل ناڈو میں کھیلی جاتی ہے۔ اس کا آغاز 2016میں ہوا ہے۔

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 3354 Print Article Print

YOU MAY ALSO LIKE:

Reviews & Comments

Language:    
Cricket Getting More advance and popular, Unlike test matches, we don’t need to wait for 5 days to get the result. If you consider Test Cricket matches as classical than t20 is jazz and pop of the game. It attracts people of all ages and every corner of the world.