’پاکستان نے ایک ہزار سے زائد القاعدہ اراکین پکڑے یا مارے‘

افواج پاکستان کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخار نے جمعرات کو دعوٰی کیا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کے دوران پاکستانی فوج نے القاعدہ کے ایک ہزار سے زائد شدت پسند پکڑے یا مارے ہیں۔

رواں ماہ کے اوائل میں آئی ایس پی آر کے سربراہ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد جی ایچ کیو راولپنڈی میں اپنی پہلی پریس کانفرنس کرتے ہوئے میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور ’دہشت سے سیاحت‘ تک کے سفر میں نہ صرف یہ کہ اس کے 80 ہزار سے زائد لوگ قربان ہوئے بلکہ 180 ارب ڈالر سے زیادہ کا مالی نقصان بھی ہوا۔

’آپریشن رد الفساد کے دوران 1200 سے زائد چھوٹی بڑی فوجی کارروائیاں کی گئیں جبکہ ڈیڑھ لاکھ سے زائد خفیہ اطلاعات پر مبنی آپریشنز کیے گئے۔ ہزار سے زیادہ القاعدہ کے شدت پسند پکڑے یا مارے گئے۔ آج قبائلی علاقوں کا صوبہ خیبر پختونخوا میں ضم ہو جانا امن کی جیت ہے۔‘

مزید پڑھیں’احسان اللہ احسان کے فرار کی خبر درست‘Node ID: 459626ابھینندن کے طیارے کے میزائلوں کی نمائشNode ID: 461116امن معاہدہ، پاکستان کو تقریب میں شرکت کی دعوتNode ID: 461221

انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن پاکستان کے فائدے میں ہے اور پاکستان کی کوششوں سے ہی افغان امن معاہدے پر دستخط ہونے جا رہے ہیں جس کو دنیا تسلیم کرتی ہے۔

انہوں نے افغان امن معاہدے کے لیے مذاکرات میں تعطل کے تاثر کو بھی رد کر دیا۔

انڈیا کے حوالے سے بات کرتے ہونے انہوں نے کہا کہ پاکستان اور انڈیا کے مابین جنگ کی کوئی گنجائش نہیں ہے کیونکہ ایسا ہونے کی صورت میں یہ ارادوں اور کنٹرول سے باہر ہو جائے گی۔ تاہم پاکستان انڈین قیادت کے بیانات کو سنجیدگی سے لے رہا ہے اور ہر قسم کا جواب دینے کے لیے تیار ہے۔

’رواں سال اب تک انڈیا 384 مرتبہ سیز فائر لائن کی خلاف ورزیاں کر چکا ہے‘ (فوٹو: اردو نیوز)بابر افتخار نے کہا کہ ’رواں سال اب تک انڈیا 384 مرتبہ کنٹرول لائن پر سیز فائر کی خلاف ورزی کر چکا ہے جس میں دو شہری شہید اور 30 زخمی ہوئے ہیں۔‘

گذشتہ سال 27 فروری کو انڈیا کے ساتھ جھڑپ میں ان کے دو طیارے گرانے اور ایک پائلٹ گرفتار کرنے کا ذکر کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ پاکستان آج 27  فروری کے دن کو ’یوم تشکر‘ اور ’یوم عزم‘ کے طور پر منا رہا ہے، کیونکہ یہ دن 1947 سے اب تک کی پاکستانی تاریخ میں ایک روشن دن ہے۔

پاکستان 27  فروری کے دن کو ’یوم عزم‘ کے طور پر منا رہا ہے (فائل فوٹو: ٹوئٹر)انہوں نے مزید کہا کہ ’پاکستان اپنے خلاف ہونے والی ہر ظاہری یا خفیہ سازش سے مکمل آگاہ ہے۔ مشرقی سرحد پر انڈیا کی طرف سے لگاتار خطرات کا سامنا ہے۔ یہ طرز عمل قیام امن کے لیے شدید خطرہ ہے۔‘

کورونا وائرس سے نمٹنے کے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اس مرض سے لڑنے کے لیے وزارت صحت کی حکمت عملی کار گر ثابت ہوئی ہے۔ جب کہ فوج بھی اس معاملے پر مدد کے لیے تیار ہے اور اس کی طبی سہولیات الرٹ پر ہیں۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.