مسجداقصیٰ پر اسرائیلی فوج کاحملہ، تقریباً 200 نمازی زخمی

فلسطين ميں اسرائيل کی دہشت گردی، مسجد اقصیٰ پر فوج کے حملے ميں 200 کے قریب نمازی زخمی ہوگئے۔ اسرائيلی فوج نے تراويح کے دوران دھاوا بولا، قيام اليل کے دوران مسجد کے اندر شيل پھينکے۔ واقعے کے بعد فلسطين کے مغربی کنارے ميں احتجاج کے دوران نوجوانوں پر اندھا دھند فائرنگ بھی کی گئی، جس ميں 2 نوجوان شہيد اور ايک زخمی ہوگيا۔

مقبوضہ بیت المقدس میں مسلمانوں کے تیسرے مقدس ترین مقام مسجد اقصیٰ پر رمضان المبارک میں اسرائیلی فوجیوں نے نمازیوں پر حملہ کردیا، واقعے میں تقریباً 200 افراد زخمی ہوگئے۔

فلسطینی ریڈ کریسنٹ کے مطابق زخمیوں میں 80 افراد کی حالت تشویشناک ہے، جنہیں اسپتال میں داخل کرلیا گیا ہے۔

مسجدِ اقصیٰ ميں فلسطينی نمازِ تراويح پڑھ رہے تھے کہ اسرائيلی فوج نے دھاوا بول ديا، قيام اليل کے دوران اسرائيلی فوج نے مسجد کے اندر بھی شيل پھينکے، جہاں خواتین اور بچوں کی بھی بڑی تعداد موجود تھی۔

دوسری جانب مغربی کنارے ميں اسرائيلی فوج کے حملے کے دوران فلسطينی نوجوانوں پر اندھا دھند گولياں برساديں، 2 نوجوان شہيد اور ايک شديد زخمی ہوگيا۔

اسرائيلی فوج نے مقبوضہ بيت المقدس کے علاقے شيخ جراح ميں فلسطينيوں کے گھروں پر قبضہ کرليا ہے، زبردستی گھر خالی کرانے پر جھڑپيں ہوئيں جس میں کئی نوجوان زخمی ہوئے، صيہونی فورسز نے 9 فلسطينيوں کو بھی گرفتار کرليا ہے۔

حماس نے فلسطینیوں سے رمضان کے اختتام تک مسجد اقصیٰ کے احاطے میں موجود رہنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ تحریک کسی بھی قیمت پر مسجد اقصیٰ کا دفاع کرنے کیلئے تیار ہے۔

امریکا کا کہنا ہے کہ زبردستی بے دخلی مشرقی بیت المقدس کی صورتحال کو مزید خراب کرسکتی ہے۔ اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ جبری بے دخلی

جنگی جرائم کے مترادف ہوسکتی ہے، جرمنی، فرانس، اٹلی اور برطانيہ نے غيرقانونی یہودی آباد کاری کو روکنے کا مطالبہ کردیا۔

ہفتے کو اسرائیل کے درجنوں عرب شہریوں نے مقبوضہ بیت المقدس کے فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے ناصرت میں مظاہرہ کیا اور اسرائیلی کارروائی کو ’دہشت گردی‘ قرار دیا۔

اسرائیل میں عربوں کی کمیٹی نے، جو ملک کی 20 فیصد اقلیت کی نمائندگی کرتی ہے، نے دوسرے اسرائیلی شہروں اور بیت المقدس میں احتجاج کا مطالبہ کیا۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.

87