روپے کی بےقدری؛ ڈالر ملکی تاریخ کی نئی بلند ترین سطح پر جاپہنچا

image

حکومت کے تمام دعوؤں کے باوجود کرنسی مارکیٹ میں پاکستانی روپے کی بے قدری کا سلسلہ جاری ہے اور ڈالر ملکی تاریخ کی نئی بلند ترین سطح پر جاپہنچا ہے۔

ملک میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں تاریخی گراوٹ دیکھی جارہی ہے۔ بدھ کے روز انٹر بیئک میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں مزید 31 پیسے کی کمی دیکھی گئی اور ایک ڈالر 176 روپے 79 پیسے کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔

انٹر بینک کی طرح اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر کی قدر میں 50 پیسے کا اضافہ ہوا ہے، ایک امریکی ڈالر 179 روپے 50 پیسے میں فروخت کیا جارہا ہے۔

متعلقہ خبریں: آئی ایم ایف کے ساتھ معاملات طے پا گئے

میڈیا رپورٹس کے مطابق تحریک انصاف کے دور حکومت میں پاکستانی کرنسی کی قدر میں 30.5 فیصد کمی دیکھی گئی ہے۔

اگست 2018 میں جب تحریک انصاف برسراقتدار آئی تو ایک امریکی ڈالر کی قدر 123 روپے کے قریب تھی لیکن اب یہ انٹر بینک میں 176 روپے کی سطح پر پہنچ گیا ہے۔

متعلقہ خبریں: سعودی عرب سے 3 ارب ڈالر موصول

واضح رہے کہ کچھ روز قبل سعودی عرب نے اسٹیٹ بینک کے اکاؤنٹ میں 3 ارب ڈالر رکھوائے ہیں جس کا مقصد روپے کی قدر کو کنٹرول کرنا ہے، اس کے علاوہ ایک ارب ڈالر سے زائد کے قرض کے لیے آئی ایم ایف سے بھی معاملات طے پاچکے ہیں ، جس کے تحت حکومت رواں ماہ ہی منی بجٹ لارہی ہے۔

Square Adsence 300X250


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.