امریکہ سے ’ٹکراؤ‘، شمالی کوریا کا جوہری پروگرام کی بحالی کا عندیہ

image

شمالی کوریا نے امریکہ کے ساتھ ’ٹکراؤ‘ کے لیے تیاری کا عندیہ دیتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ وہ جوہری پروگرام کی بحالی کے علاوہ دور تک مار کرنے والے ہتھیاروں کے تجربات بھی کر سکتا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق امریکہ کی جانب سے میزائل پروگرام پر پابندیاں لگائے جانے کے بعد یہ شمالی کوریا کی تازہ ترین دھمکی ہے۔

رپورٹ کے مطابق پیانگ یانگ نے 2017 سے اب تک جوہری اور انٹرکانٹی نیننٹل بلیسٹک کے تجربات نہیں کیے ہیں۔

اس وقت کم جونگ نے تجربات کے سلسلے کو روکتے ہوئے بڑی سطحی پر سفارت کاری کا آغاز کیا تھا اور مذاکرات کی ناکامی سے قبل تین مرتبہ اس وقت کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کی تھی۔

اس کے بعد جوہری ہتھیار رکھنے والا ملک امریکہ کی مذاکرات کی پیشکش کو رد کرتا رہا ہے جبکہ کچھ تجربات کا آغاز بھی کیا جن میں ہائپرسونک میزائل بھی شامل تھے، جس سے ظاہر ہے کہ کم اپنی فوج مزید مضبوط بنانے کے مقصد کے تحت آگے بڑھ رہے ہیں۔

پچھلے ہفتے جب واشنگٹن نے شمالی کوریا پر پابندیاں عائد کیں تو پیانگ یانگ کی کی جانب سے اس کو ’اشتعال انگیزی‘ قرار دیا گیا تھا اور روایتی ہھتیاروں کے تجربات کا سلسلہ تیز کر دیا تھا اور ارادہ ظاہر کیا تھا کہ ایسا اس کی حکومت کے خلاف کسی بھی کارروائی کا مضبوط جواب دینے کے لیے کیا جا رہا ہے۔

جمعرات کو ایک سرکاری اجلاس کے بعد سرکاری نیوز ایجنسی کے سی این اے کی وساطت سے جاری ہونے والے بیان میں بتایا گیا کہ ’دشمنی پر مبنی پالیسی اور امریکہ کی جانب سے فوجی کارروائی کی دھمکی خطرے کے نشان تک پہنچ گئی ہے اور اب اس کو مزید نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔‘

نیوز ایجنسی کے مطابق شمالی کوریا کے حکام کا متفقہ طور پر یہ ماننا ہے کہ ’ہمیں امریکہ کے ساتھ لمبی لڑائی کے لیے تیاری کرنی چاہیے۔‘

رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ تمام عارضی طور پر معطل شدہ سرگرمیوں کو دوبارہ شروع کیے جانے کا جائزہ بھی لیا جا رہا ہے۔


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.