ٹک ٹاک نے 60 لاکھ پاکستانی ویڈیوز ہٹادیں

image

چین کی ویڈیو شیئرنگ ایپلی کیشن ’ٹک ٹاک‘ نے تین ماہ کے دوران کمیونٹی گائیڈ لائنز کی خلاف ورزیوں پر 60 لاکھ سے زائد پاکستانی ویڈیوز اپنے پلیٹ فارم سے ہٹادیں۔

چینی ایپ ’ٹک ٹاک‘ کی جانب سے جاری تازہ ترین ’کمیونٹی گائیڈلائنز انفورسمنٹ رپورٹ‘ کے مطابق دنیا بھر میں سب سے زیادہ جن ممالک کی ویڈیوز حذف کی گئی ہیں ان میں پاکستان کا چوتھا نمبر ہے، جہاں خلاف ورزی پر پچھلے سال جولائی سے ستمبر تک 60 لاکھ سے زائد ویڈیوز ڈیلیٹ کی گئیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جولائی سے ستمبر 2021ء کے دورانیہ میں کمیونٹی گائیڈ لائنز کی خلاف ورزی پر ’ٹک ٹاک‘ کی طرف سے دنیا بھر میں 9 کروڑ ویڈیوز ڈیلیٹ کی گئی ہیں۔

ٹک ٹاک کا کہنا ہے کہ ڈیلیٹ کی گئی 95 فیصد ویڈیوز ایسی ہیں جنہیں پلیٹ فارم پر اپ لوڈ کئے جانے کے بعد بغیر کسی صارف کی شکایت کے حذف کیا گیا، 88 فیصد ویڈیوز کو کسی کے دیکھنے سے پہلے ڈیلیٹ کیا گیا جبکہ 93 فیصد ویڈیوز کو اپ لوڈ ہونے کے 24 گھنٹے کے اندر ہی ہٹا دیا گیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان سے 73.9 فیصد مواد ہراسانی کو فروغ دینے اور 72.4 فیصد مواد نفرت کو بڑھاوا دینے جیسی وجوہات کی بناء پر ڈیلیٹ کیا گیا۔

ٹک ٹاک انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ویڈیو شیئرنگ پلیٹ فارم کو مزید بہتر بنانے کیلئے اس سال کمپنی واشنگٹن، ڈبلن اور سنگاپور میں اپنے مانیٹرنگ اور تحقیقاتی سینٹرز قائم کریگی۔

واضح رہے پاکستان کی مرکزی حکومت متعدد بار مبینہ طور پر ’نازیبا اور غیراخلاقی‘ مواد کو اپنے پلیٹ فارم پر جگہ دینے کی وجہ سے ٹک ٹاک ایپ کو بلاک کرچکا ہے، ٹک ٹاک پر لگنے والی پابندی کو آخری بار اکتوبر 2021ء میں ہٹایا گیا تھا۔


News Source   News Source Text

مزید خبریں
سائنس اور ٹیکنالوجی
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.