لاہوردا پاوا، اختر لاوا، سوشل میڈیا پر ہٹ، ماجرا کیا ہے؟

image

سوشل میڈیا پر ہر جگہ ،ہر میم اور ہر ٹویٹ میں ایک ہی ڈائیلاگ دیکھنے میں آرہا ہے۔ وہ ڈائیلاگ ہے “لاہور دا لاوا ، اختر پاوا”۔ لیکن اس ڈائیلاگ کے پیچھے ماجرا کیا ہے اور یہ کس کا ڈائیلاگ ہے ایسے کئی سوال بھی سوشل میڈیا پر پوچھے جا رہا ہیں۔

لاہور دا پاوا اختر لاوا، یہ کسی فلم کا ڈائیلاگ نہیں بلکہ لاہور کے ایک جیتے جاگتے کردار کا اپنا جملہ ہے۔ صرف یہ ڈائیلاگ ہی نہیں اختر لاوا کے منفرد انداز نے انہیں اور ان کے ڈائیلاگ کو سوشل میڈیا پروائرل کردیا۔

ہم نیوز سے خصوصی گفتگو میں پچہتر سالہ اختر لاوا کہتے ہیں کہ دوستوں کے ساتھ مذاق مذاق میں یہ ڈائیلاگ بولا تو انہوں نے ویڈیو ٹک ٹاک پر اپ لوڈ کردی۔دیکھنے والوں نے خوب پسند کیا تو انہوں نے اسے اپنا علامتی ڈائیلاگ بنالیا۔

یہ بھی پڑھیں:

انہوں ے بتایا ہے کہ مری میں ویڈیو بنائی تھی۔ دوستوں نے اپ لوڈ کردی اور لوگوں نے پسند کیا۔اور دیکھتے دیکھتے ویڈیو وائرل ہو گئی۔ اندازاہ نہیں تھا کہ  یہ جملہ سوشل میڈیا پر اس قدر ہٹ ہوجائے گا۔

اختر لاوا کہتے ہیں کہ انہیں مشہور کرنے میں اس ویڈیو کا بھی ہاتھ ہے جب وہ شیر کے ساتھ بیٹھے اپنا یہی ڈائیلاگ بولنے والے تھے کہ شیر اٹھ گیا۔کسی دوسرے کو ہنسانا بڑی بات ہوتی ہے۔

Lo G Lahore dy paway da Lawa nikal aya jaay😂

Lahore Da Pawa

Akhtar Lawa

😂😂😂😂😂

— Waqas Akhter  (@waqasakhter077) December 5, 2022

اختر لاوا کے ڈائیلاگ کے بعداس  پر ٹویٹس اور میمز کی بھر مار  لگ گئی۔ سوشل میڈیا صارفین نے اپنے اپنے انداز میں اختر لاوا کے ڈائیلاگ  کوسراہا اور میمز بنائیں۔

Best scene ever#lahoredapawa pic.twitter.com/MIT4YenEPg

— @OMG_it’s_wania (@stu_dyinggg) December 6, 2022

🤣🤣🤣#LahoreDaPawaAkhtarLawa #lahoredapawa pic.twitter.com/QsJs90AM25

— Mustafa Mushtaq (@Mustafasays786) December 7, 2022

نہ صرف پاکستان بلکہ بیرون ممالک میں بھی یہ ڈائیلاگ مشہور ہو رہاہے۔

#LahoreDaPawaAkhtarLawa #lahoredapawa #Lahore pic.twitter.com/57BKDS2yr3

— Ahmad Hu yawwrrr (@iamcitizenahmad) December 7, 2022

 


News Source   News Source Text

مزید خبریں
تازہ ترین خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.