آزرؔ رہا ہے تیشہ مرے خاندان میں

Poet: Dilawar Ali Azar
By: Ayan, khi

آزرؔ رہا ہے تیشہ مرے خاندان میں
پیکر دکھائی دیتے ہیں مجھ کو چٹان میں

سب اپنے اپنے طاق میں تھرا کے رہ گئے
کچھ تو کہا ہوا نے چراغوں کے کان میں

میں اپنی جستجو میں یہاں تک پہنچ گیا
اب آئنہ ہی رہ گیا ہے درمیان میں

منظر بھٹک رہے تھے در و بام کے قریب
میں سو رہا تھا خواب کے پچھلے مکان میں

لذت ملی ہے مجھ کو اذیت میں اس لیے
احساس کھینچنا تھا بدن کی کمان میں

نکلی نہیں ہے دل سے مرے بد دعا کبھی
رکھے خدا عدو کو بھی اپنی امان میں

آزرؔ اسی کو لوگ نہ کہتے ہوں آفتاب
اک داغ سا چمکتا ہے جو آسمان میں

Rate it:
17 Feb, 2020

More Dilawar Ali Azar Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Owais Mirza
Visit Other Poetries by Owais Mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City