دشمنیجو کرتے ہو دشمنی نبھاؤ پھر

Poet: Ali hayat
By: Ali hayat, peshawar

 دشمنی جو کرتے ہو دشمنی نبھاؤ پھر
وقت دیکھ لے گا جنگ سامنے تو آؤ پھر

پاک سر زمیں پہ اب اک قدم بڑھاؤ تم
جان ہی نہ لے لیں ہم ایسا کر دکھاؤ پھر

اس وطن کی مٹی پہ بوند بوند خون اپنا
آج بھی لٹایںگے کھل کے آزماؤ پھر

حوصلہ بھی دیکھوگے ہمتیں نہ ہا ریںگے
مٹ جہاں سے جاوگے سوچ لو تو آؤ پھر

موت سے نہیں ڈرتے چھپ کے ہم نہیں لڑتے
ریزہ ریزہ کر دیںگے اب کے پر نکالو پھر

حق تو حق ہی رہتا ہے باطلوں کو مٹنا ہے
ہم بھی سامنے آیں تم بھی آگے آؤ پھر

اس وطن کی مٹی پہ جان دینے کی خاطر
لاکھ اٹھ کے آینگے چھیڑ کے دکھاؤ پھر

آج علی قسم کھاؤ جان وطن پہ دینی ہے
دشمنوں کی قسمت میں ہار لکھ کے آؤ پھر

Rate it:
12 Oct, 2015

More Occassional / Events Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Ali hayat
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City