اس کی تصویریں ہیں،دلکش تو ہوں گی

Poet: تہذیب حافیBy: Adnan, Faizabad

اس کی تصویریں ہیں،دلکش تو ہوں گی
جیسی دیواریں ہیں ویسا سایہ ہے

اک میں ہوں جو تیرے قتل کی کوشش میں تھا
اک تو ہے جو جیل میں کھانا لایا ہے

Rate it:
Views: 3252
07 Oct, 2021