عید کے چاند کا نظارہ کر لوں

Poet: اسد جھنڈیر By: اسد جھنڈیر, MPK

 عید کے چاند کا نظارہ کر لوں
پھر نہ ملے شاید دوبارہ کر لوں

آخر کار زندگی ھے وہ اپنی۔
کیسے ان بن گذارا کر لوں؟

پیار کرتا ہوں میں اس سے۔
دور رہنا کیسے گوارا کر لوں؟

ابھی تو آغاز ھے محبت کا۔
ابھی سے کیسے کنارہ کر لوں؟

دیکھو اطراف عدو بیٹھے ہیں۔
ایسے کیسے کوئی اشارہ کر لوں؟

ڈرتا ہوں تیری جگ ہنسائی سے۔
وگرنہ فٹ سے اشارہ کر لوں۔

بے اعتباری کی بھی حد ہوتی ھے۔
دل چیر کر اسد کیا دوپارہ کر لوں؟

گڑے مردے اکھاڑ تے کیوں ہو؟
کیا لب کشائی میں دوبارہ کر لوں؟

تنگ ہو اگر تو صاف کہہ دو۔۔
کہ دنیا سے تیری کنارہ کر لوں

Rate it:
Views: 54
07 Jun, 2022
Related Tags on Occassional / Events Poetry
Load More Tags
More Occassional / Events Poetry
Popular Poetries
View More Poetries
Famous Poets
View More Poets