بارش ہوئی تو پھولوں کے تن چاک ہو گئے

Poet: پروین شاکر By: zawar, Karachi

بارش ہوئی تو پھولوں کے تن چاک ہو گئے
موسم کے ہاتھ بھیگ کے سفاک ہو گئے

بادل کو کیا خبر ہے کہ بارش کی چاہ میں
کیسے بلند و بالا شجر خاک ہو گئے

جگنو کو دن کے وقت پرکھنے کی ضد کریں
بچے ہمارے عہد کے چالاک ہو گئے

لہرا رہی ہے برف کی چادر ہٹا کے گھاس
سورج کی شہ پہ تنکے بھی بے باک ہو گئے

بستی میں جتنے آب گزیدہ تھے سب کے سب
دریا کے رخ بدلتے ہی تیراک ہو گئے

سورج دماغ لوگ بھی ابلاغ فکر میں
زلف شب فراق کے پیچاک ہو گئے

جب بھی غریب شہر سے کچھ گفتگو ہوئی
لہجے ہوائے شام کے نمناک ہو گئے

Rate it:
Views: 1895
19 Jun, 2021
Related Tags
Load More Tags
video
More Parveen Shakir Poetry
Popular Poetries
Shayari
Teer Par Teer Lagao Tumhen Dar Kis Ka Hai
Poetry in Urdu Text
Aaina Dekh Kar Tasalli Hui
Shayari
Jaun Elia Best Lines
View More Poetries
Famous Poets
View More Poets