ٹِنڈر: مقبول ڈیٹنگ ایپ کے صارفین کی حفاظت کے لیے نئے سکیورٹی فیچر متعارف

Tinder
ٹِنڈر صارفین کی تصاویر کی تصدیق کرنا چاہتا ہے تاکہ بہروپیوں سے نمٹا جا سکے

اگر آپ انٹرنیٹ پر اپنا شریکِ حیات ڈھونڈنا چاہتے ہیں لیکن کسی اجنبی سے بات چیت کرتے ہوئے گھبراتے ہیں تو یہ خبر آپ کے لیے ہے!

مقبول ڈیٹنگ ایپ ٹِنڈر نے اپنے صارفین کی حفاظت کے لیے کچھ نئے فیچر متعارف کروائے ہیں جن میں ایک پینِک بٹن اور دیگر سکیورٹی اقدامات شامل ہیں۔

دنیا بھر میں لاکھوں لوگ روزانہ اس ایپ کے ذریعے دوستی، محبت اور شراکت تلاش کرتے ہیں۔

نئے سکیورٹی اقدامات میں ہنگامی امداد، لوکیشن ٹریکنگ اور تصویری شناخت جیسے فیچرز شامل ہیں۔

ٹِنڈر 28 جنوری سے یہ فیچر امریکہ میں اپنے صارفین کے لیے متعارف کروائے گا تاہم کمپنی کی جانب سے اب تک یہ اعلان نہیں ہوا کہ باقی دنیا میں موجود لوگوں کو ان فیچرز تک رسائی کب تک مل سکتی ہے۔

ٹِنڈر کے مالکان میچ گروپ پلینٹی آف فش، اوکے کیوپڈ اور ہنج جیسی دیگر ڈیٹنگ سروسز بھی چلاتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ نئے فیچر ان کی دیگر پلیٹ فارمز پر بھی جلد ہی دستیاب ہوں گے۔

میچ گروپ کے مطابق اس نے نون لائٹ نامی ایک کمپنی میں سرمایہ کاری کی ہے جس کا کام وہ ہنگامی امداد فراہم کرنا ہے جو ٹِنڈر پر استعمال ہوں گی۔

Tinder
ڈیٹنگ ایپ میں متعارف کروایا گیا پینِک بٹن فوری طور پر ایمرجنسی سروسز کو خبردار کر دے گا

نون لائٹ کی بنائی ٹیکنالوجی کے ذریعے صارفین ریسکیو سروسز سے رابطہ قائم کر پائیں گے اور ان تک آپ کی موجودگی کے مقام یا لوکیشن کے حوالے سے تفصیلات پہنچا سکے گی۔

ٹِنڈر کے ذریعے کسی سے بھی ملاقات کرنے سے پہلے صارفین اس شخص کے بارے میں ایپ پر موجود تمام معلومات محفوظ کر سکیں گے۔ یہ ملاقات کہاں ہوگی، اس بات کا بھی ریکارڈ محفوظ رہے گا۔

کسی ناخوشگوار واقعے کی صورت میں صارف اگر ’پینک بٹن‘ دبائے تو ریسکیو سروسز کو فوراً ان کی تمام تفصیلات ارسال کر دی جائیں گی۔

تصویری شناخت سے ایپ پر موجود بہروپیوں اور اپنی شناخت نہ ظاہر کرنے یا اپنی شناخت کے بارے میں جھوٹ بولنے والوں کا سد باب ہو سکے گا۔

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
سنہ 2019 میں ٹِنڈر نے ہمیں کیا سکھایا؟ سیاست میں بہت کشش ہے

اس میں مصنوعی ذہانت کا انسانی آپریٹر کے ساتھ استعمال کیا جائے گا تاکہ ایپ پر اپ لوڈ کی گئی پروفائل تصاویر کو چیک کیا جا سکے اور صارفین سے اسی لمحے میں کئی سیلفیاں لینے کے لیے کہا جاتا تاکہ ان کی شناخت کی تصدیق ہوسکے۔

میچ گروپ کی چیف ایگزیکٹیو مینڈی جِنسبرگ نے کہا کہ یہ پہلی ڈیٹنگ کمپنی ہوگی جو کسی ایمرجنسی سروس میں سرمایہ کاری کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہمارے کاروبار کے لیے ضروری ہے کہ ڈیٹنگ کا تجربہ محفوظ اور مثبت ہو۔‘

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
حلال ڈیٹنگ گرو

انھوں نے بتایا کہ ’ہمیں نون لائٹ میں جدید ترین ٹیکنالوجی میسر ہوئی ہے جو فوری طور پر ایمرجنسی خدمات فراہم کر سکتی ہے اور یہ کسی اور ڈیٹنگ پروڈکٹ میں موجود نہیں ہے۔‘

میچ گروپ نے یہ نہیں بتایا کہ اس نے نون لائٹ میں کس قدر سرمایہ کاری کی ہے۔

ڈیٹنگ کمپنیوں اور دیگر آن لائن پلیٹ فارمز پر ماضی میں اپنے صارفین کو تحفظ فراہم کرنے کی ناکافی کوششوں پر تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

سنہ 2018 میں برطانوی پولیس نے کہا کہ آن لائن ڈیٹنگ ویب سائٹس اور ایپس سے منسلک ریکارڈ کیے گئے جنسی جرائم میں چار سال پہلے کے مقابلے میں

حالیہ مہینوں میں اوبر اور ایئر بی این بی نے بھی اپنے حفاظتی اقدامات پر اٹھتے سوالات کے پیشِ نظر نئے حفاظتی فیچر متعارف کروائے ہیں۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.