آشنا غم سے ملا راحت سے بیگانہ ملا

Poet: Kaleem Aajiz
By: hammad, khi

آشنا غم سے ملا راحت سے بیگانہ ملا
دل بھی ہم کو خوبی قسمت سے دیوانہ ملا

بلبل و گل شمع و پروانہ کو ہم پر رشک ہے
درد جو ہم کو ملا سب سے جدا گانہ ملا

ہم نے ساقی کو بھی دیکھا پیر مے خانہ کو بھی
کوئی بھی ان میں نہ راز آگاہ مے خانہ ملا

سب نے دامن چاک رکھا ہے بقدر احتیاج
ہم کو دیوانوں میں بھی کوئی نہ دیوانہ ملا

ہم تو خیر آشفتہ ساماں ہیں ہمارا کیا سوال
وہ تو سنوریں جن کو آئینہ ملا شانہ ملا

کیا قیامت ہے کہ اے عاجزؔ ہمیں اس دور میں
طبع شاہانہ ملی منصب فقیرانہ ملا
 

Rate it:
29 Dec, 2016

More Kaleem Aajiz Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: owais mirza
Visit Other Poetries by owais mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City