اس سے پہلے کہ کہانی سے کہانی نکلے

Poet: Aqeel Abbas
By: sana, khi

اس سے پہلے کہ کہانی سے کہانی نکلے
آ مرے دل میں اتر آنکھ سے پانی نکلے

اتنی عجلت میں تلاشی نہیں لی جا سکتی
سانپ کو حکم کرو رات کی رانی نکلے

خیر کی ساری دعاؤں کا بھلا ہو لڑکی
ایک بوسہ دم رخصت کہ گرانی نکلے

اس لیے بھی یہ بدن کھینچنا پڑتا ہے مجھے
جتنے سکے تھے مرے پاس زمانی نکلے

اس پہ موقوف ہے جو حکم ہو دریا دیکھے
ریت نکلے یا ترائی میں سے پانی نکلے

Rate it:
14 Feb, 2020

More Aqeel Abbas Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Owais Mirza
Visit Other Poetries by Owais Mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City