تھانے میں کتنے لوگ کہ لاک اپ نشیں رہے

Poet: سرور فرحان سرورؔ
By: سرور فرحان سرورؔ, Karachi

تھانے میں کتنے لوگ کہ لاک اَپ نشیں رہے
کُچھ اُن میں با اثر تھے، کُچھ کمّی کمیں رہے

چور، ڈکیت، قاتل یا بَلوائی، اغوا کار
کتنے ہی “ماہرین“ کہ یاں کے مَکیں رہے

کتنوں کو ہم نے چھوڑا، سفارش کے زور پر
کتنے ہی تھے جو نوٹ سے “مُجرم“ نہیں رہے

لیڈر، عوام، اچھے، بُرے، معصوم، خطا کار
کس کس کا پُوچھتے ہو کہ اکثر یہیں رہے

کتنی ہی بار ہم نے سجایا ڈرائنگ رُوم
چھِتر ہمارے تھانے کے از حد حسیں رہے

کتنے ہی راز، راز رہے، کروا کے مُٹھی گرم
دیوار و دَر اِس تھانے کے سب کے امیں رہے

اِک بار مہماں بن کے گر پہنچا کوئی یہاں
خاطر نہ بھُولے عمر بھر، چاہے کہیں رہے

جانے کیوں شُرفا ڈرتے ہیں تھانے کے نام سے
تھانے تو سب کے واسطے خَندہ جبیں رہے

سرور تو بے وجہ ہی ہیں بد ظن پولیس سے
جب دیکھئے یہ صاحب ہم پہ نُکتہ چِیں رہے

Rate it:
07 Mar, 2013

More Funny Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Sarwar Farhan Sarwar
I have been teaching for a long time not because teaching is my profession but it has been a passion for me. Allah Almighty has bestowed me success i.. View More
Visit 95 Other Poetries by Sarwar Farhan Sarwar »

Reviews & Comments

واہ سرور بھائی
ایک بات سمجھ نہیں آئی یہ پولیس کے بارے میں اتنی معلومات آپ کو کیسے ملیں
جیساکہ آپ نے کہا تھا کہ آپ ایک ٹیچر ہیں
پھر ایک ٹیچر کا پولیس سے کیا تعلق
شاید آپ پہلے پولیس والے تھے
ہے نا ہاں ہاں بولیں کیا کہا نہیں
اچھا تو پھر آپ کا کوئی رشتہ دار پولیس میں ہوگا جو آپ کو رپورٹس دیتا ہوگا
ہے نا ہاں ہاں بولیں کیا کہا نہیں
پھر یہ ساری معلومات کہاں سے اور کیسے ملیں
اب تو بس ایک ہی صورت ہے
کہ آپ بھی شائد کسی تھانے کے لاکب میں مہمان رہ چکے ہیں
اب سوچ رہا ہوں آپ نکلے کیسے تھے
ایک غریب استاد کے لئے نہ تو کوئی سفارش کرے گا
نہ اس کے پاس اتنے نوٹ ہیں کہ مجرم نہ رہے
اچھا اسی لیئے ساری معلومات لیکر ہی نکلے ہیں
کیا خوب احاطہ کیا ہے اس موضوع کا
اور یہ آپ کا خاصہ ہے
آپ کو اچھا دوست سمجھ کر کچھ کہانی بنائی ہے امید ہے ناراض نہیں ہوں گے
مخلص ندیم مراد


بہت بہت معزرت
سرور بھائی

By: NADEEM MURAD, umtata RSA on Mar, 10 2013

Nadeem Bhai,
aap ki baat bilkul durust hai, Janab.

Hum Lock up me Chacha Ghalib ki Shikayat pe Band huey Thay.
Chacha Ghalib ne Report derj kerwaee thi k aakhir Hum un ko Chacha kiyu kehtey hain? Is se tu un ki Umer ka Bhanda Phoot sakta hai.

Hum ne barri mushkil se un ko yaqeen dilaya k derasl Hum un ko Chacha sirf is liye kehtey hain K Shayed isi tarah Hamarey Kalam me Dard aasakey.

Khair Tha'ney me chnad Ghantey Guzarney k Baa'd, Hmarey Kalam hi Nahi bal k Nishist wo Berkhast me bhi dard aa gya tha, Lekin aakhir hum Chacha Ghalib ko ye Bawer Kerwaney me Kamiyab ho hi Gaey k Chacha aur wo bhi kisi Nakam Shayar ka Chacha hona koi esi buri baat nahi hai. :-)

Haan Jub Hum Bahar Nikal rahey thay tu Hum ne suna K Chacha Ghalib kisi esey Sahab ko Dhoond Rahey hain Jo Ghalib ko Ma'moo Bna Ga'ey hain aur Jub se Chacha Ghalib ne "Munna Bhai MBBS" dekhi hai wo Lafz Ma'moo k barey me Khasey Mashkook ho gaey hain...

Apna Bohat Khayal Rakhiye Ga

Khair Andesh
By: Sarwar Farhan Sarwar, Karachi on Mar, 11 2013

سرور
آپ کا کلام حسبِ معمول بہت پر اثر اور بامقصد ہے۔
آپ ہنستے ہنستے وہ سب کہہ جاتے ہیں جسے کہنے کے لئے بڑے دل گردے کی ضرورت ہوتی ہے۔
مذاق ہی مذاق میں اتنے دقیق موضوعات کو شاعری کا جامہ پہنانا اور اسے دلچسپ پیرائے میں دوسروں
تک پہنچانا ایک بہت بڑا کام ہے جسے آپ نے آسانی سے سر انجام دے لیا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آپ ایک ماہر ڈاکٹر کی طرح معاشرتی بیماریوں کا بہت عمدگی اور سچائی سے تجزیہ کرتے ہیں--------
آپ کے کلام میں ہمیشہ ایک پیغام بھی ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آپ ایک طرح سے اپنے قلم کو ذریعہ بنا کر ان معاشرتی برائیوں کے خلاف جنگ لڑ رہے ہیں جنھوں
نے پورے معاشرے کو اپنی لپیٹ میں لے کر کھوکھلا کر دیا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بہت بہت بہت داد قبول کیجئیے
ہمیشہ خوش رہئیے
میری دلی دعا ہے کہ آپ کی حساسیت کی یہ آگ ہمیشہ ایسی ہی رہے۔

By: Azra Naz, Reading UK on Mar, 09 2013

Azra Sahiba,
aap ki Inayat hai k aap Na sirf merey kalam ko perrhti hain bal k apni besh qeemat ra'ey se bhi nawazti hain. aap ka tabsara merey liye hamesha kuch mazeed behter kerney ka hosla banta hai.

Bohat Bohat Nawazish
By: Sarwar Farhan Sarwar, Karachi on Mar, 10 2013

wah sarwar bhai............excillent
really nice and truth.....police culture mostly is like this....
Kitnay ho thay jo "NOTE" say mujrim nhin rhay....
Really nice and positive humour u always creat and i really like ur way of expression....Humour is a powerful organ to highlight such issues and u have full command on it.
Baba abeer abuzari said
Police noo je main aakhan chor te faida kih?
utton krda phira takor te faida kih?

really nice to read ur poetries always,....khush rhain hmesha aur aisay hi khushiyan spread krtay rhain...best wishes

By: muhammad nawaz, sangla hill on Mar, 09 2013

Bohat Shukriya Nawaz Bhai,
Hamara Police Culture, der asl "Gorey" Hakimo'n ka tohfa hai, jis k qayam ka maqsad sirf aur sirf yehi tha k "Hindustaan" k logo'n ko b'dastoor angrezo'n ka Ghulam rakha jaey, isi liye angrez jo ethical laws apney England me laziman impose kerta, un se Indian Police k log qata'ee nabalad rehtey.

Aazaadi k ba'ad bhi police k department ko jaan boojh ker political influence k tehat kharab kiya jata raha.

Meri opinion me ager aaj hamara Police ka department bura hai tu is ki barri waja Hum khud bhi hain. Allah ne chaha tu aahista aahista Perrhey Likhey, Mehnati aur Imandar Police Officers aur Jawano'n ki aamad se Hamara Police Culture zaroor Tabdeel ho ga.

Abeer Bhai ki tarah meri Is Poem me bhi sirf Be-Iman Police walo'n ka Mazaq Urraya Gaya hai, Mager Asl me Apney Fara'ez Honesty se anjaam deney waley Police walo'n k Liye merey Dil me bohat ziayada respect bhi hai aur mohabbat bhi.

aap ki besh qeemat ra'ey hamesha mere Kalam ko mazeed behter banati hai.
By: Sarwar Farhan Sarwar, Karachi on Mar, 09 2013

سرور بھائی کیا خوب لکھا ہے اپ نے۔۔۔۔۔۔۔ہمارا پولیس کلچر اسی طرح کا ہے پیسے اور سفارش سے سب کام ہوجاتے ہیں۔۔بگناہ کو مجرم اور گنہگار کو بے گناہ بنایا جاتا ہے یہاں۔۔۔۔۔۔۔اگر یہ کلچر نہ بدلا گیا تو ہماری آنے والی نسلیں بھی اس کے لبیٹ میں آہیں گی اور ہمارے بچے ہمیں اس معاشرے کی اس لعنت کے ذمہ دار ٹھرائیں گے۔ بہت اعلی اللہ آپ کو انتا اچھا لکھنے کا اجر دے آمین۔۔۔۔۔۔۔۔۔

By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on Mar, 08 2013

Bohat Nawazish Jamil Bhai,
aap ki Mohabbat aur Khaloos bhari ra'ey hamraey liye hamesha se bohat qeemti rahi hai. aap ne bilkul darust ferma'ya k hamarey haa'n ka Police Culture, masbat tabdeeli ka mutqazi hai aur ye tabdeeli ta'leem yafta aur suljhey huey Jawan aur Afsaran hi La Saktey hain.

Allah Ta'la hame'n bhi positive approach rakhney waley mehnati aur professional police k Afsaran wo Jawanan de. (Amen)
By: Sarwar Farhan Sarwar, Karachi on Mar, 09 2013
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City