جب سے یہ زندگی ملی ہے ہمیں

Poet: Shahid Rizvi
By: Madhia, khi

جب سے یہ زندگی ملی ہے ہمیں
چبھ رہا ہے غبار آنکھوں میں

آئینہ دل میں ٹوٹ جاتا ہے
کرچیوں کا شمار آنکھوں میں

بے بسی ہائے تمنا مت پوچھ
جم گیا انتظار آنکھوں میں

اک سودا ہمارے ذہن میں ہے
اور اس کا خمار آنکھوں میں

کر رہا ہے پناہ گاہیں تلاش
دل افسردہ کار آنکھوں میں

آنسوئوں کے لیے بنی رضوی
درد کی رہگزار آنکھوں میں

Rate it:
14 Feb, 2020

More Shahid Rizvi Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Owais Mirza
Visit Other Poetries by Owais Mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City