دعاء

Poet: ناصر دھامسکر-مجگانوی
By: Nasir Ibrahim Dhamaskar, Ratnagiri

خدا تجھ سے ہے التجا
سہارا تو ہی ہے سدا

بکھر سے گئے ہیں یہاں
ملے ہم کو بھی آسرا

نہیں کوئی تیرے سوا
سہارا تو ہی ہے سدا

سفینہ ہے گرداب میں
بچا بن کے تو نا خدا

کرم غرق ہونے نہ دے
کنارہ بھی کشتی لگا

پلٹ دے روش بھی تو اب
سہارا تو ہی ہے سدا

مصیبت و قہر آئے گر
ہو امر کن سے فنا

ڈگر پر خطر ہے بڑی
بدل دے تو ساری فضا

پریشاں بہت بھی ہو گر
سہارا تو ہی ہے سدا

سماوی یا ارضی رہے
دفع ہو جائے سب بلا

بحر بھی تو، ساحل بھی تو
جہاں بھی چلے، تو روا

صدا نکلے ناصر کی بھی
سہارا تو ہی ہے سدا

 

Rate it:
07 Feb, 2021

More Religious Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Nasir Ibrahim Dhamaskar
Visit 71 Other Poetries by Nasir Ibrahim Dhamaskar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>