دیکھ ہماری دید کے کارن کیسا قابلِ دید ہوا

Poet: ibn e insha
By: TARIQ BALOCH, HUB CHOWKI

دیکھ ہماری دید کے کارن کیسا قابلِ دید ہوا
ایک ستارہ بیٹھے بیٹھے تابش میں خورشید ہوا

آج تو جانی رستہ تکتے، شام کا چاند پدید ہوا
تو نے تو انکار کیا تھا، دل کب ناامید ہوا

آن کے اس بیمار کو دیکھے، تجھ کو بھی توفیق ہوئی
لب پر اس کے نام تھا ترا، جب بھی درد شدید ہوا

ہاں اس نے جھلکی دکھلائی، ایک ہی پل کودریچےمیں
جانو اک بجلی لہرائی، عالم ایک شہید ہوا

تو نےہم سےکلام بھی چھوڑا، عرضِ وفا کے سنتے ہی
پہلے کون قریب تھا ہم سے، اب تو اور بعید ہوا

دنیا کے سب کاج چھوڑے، نام پہ ترے انشا نے
اور اسے کیا تھوڑے غم تھا؟ تیرا عشق مزید ہوا

Rate it:
10 Dec, 2013

More Ibn e Insha Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Tariq Baloch
zindagi bohot mukhtasir hai mohobat ke liye
ise nafrat me mat ganwao.....
.. View More
Visit 1648 Other Poetries by Tariq Baloch »