سفر_معراج

Poet: Mubeen Nisar
By: Mubeen Nisar, Islamabad

معراج _شوق و عشق کو جاتے ہیں
محمد ﷺ بارگاہ_حسن میں جاتے ہیں

زمیں سے سفر ہوا عالم _تجلیات تک
ورطہء حیرت میں زمانے پڑ جاتے ہیں

حقیقت سادہ ہے ای=ایم سی2 کی
یعنی کہ جسم نور میں ڈھل جاتے ہیں

پھر فاصلے کچھ معانی نہیں رکھتے
! لمحے بھی تعظیما" ٹھہر جاتے ہیں

بلیک ھول کا بیان اسطرح ہو شائد
نور گزر جائے اندھیرے رہ جاتے ہیں

آسمانوں کے دروازے یونہی نہیں کھلتے
مہمان خاص ہی! اجازت سے جاتے ہیں

اس حد سے آگے مقام_حیرت ہے
جہاں جبرائیل کے پر جل جاتے ہیں

وہ بیری کا درخت وہ آخری کنارا
جس سے آگے حسن و عشق مل جاتے ہیں
 

Rate it:
04 Oct, 2019

More Sufi Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: mubeen nisar
Business, Physics & literature... View More
Visit 240 Other Poetries by mubeen nisar »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City