غار سجدہ

Poet: Muhammad Siddique Prihar
By: Muhammad Siddique Prihar, Layyah

یارب الفت رسول کی میرے دل میں ڈال دے
جتنی ہیں اورمحبتیں وہ سب ہی نکال دے
تصورمیں میرے دل میں بسارہے جلوہ حبیب کا
رہے جس میں یادان کی ایساخیال دے
میں ہی نہیں کہتاکہتے ہیں حسان یہ
سرکارخودچاہایہ حسن وجمال دے
یارب جوبھی مو ئمن پریشان حال ہیں
صدقہ ء حبیب ان کے مصائب کوٹال دے
دیدارمصطفی کے طالب کرتے ہیں یوں دعا
طیبہ کی حاضری کا موقع اسی سال دے
پڑھیں نمازایسی جوبرائیوں سے روک دے
میری آذان میں یارب سوزبلال دے
خالق ہے تواے مولیٰ مالک ورزاق بھی تو
بچاکرحرام سے ہمیں رزق حلال دے
بھیج دیاغوث اعظم نے اسی وقت چورکو
جب کہاخضرنے ابھی ابھی ابدال دے
کرتاہی رہوں رحمت عالم کی مدح سرائی
میری زبان میں میرے اﷲ ایساکمال دے
بہترہے وقت وہ گزرے ذکرحبیب میں
خرچ ہومیلادمیں ایسازرمال دے
غارسجدہ میں صدیق ؔ محبوب وبتول نے اﷲ سے
مانگی ہے یہ دعابخش امت کے اعمال دے

 

Rate it:
07 Oct, 2019

More Religious Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Siddique Prihar
Visit 117 Other Poetries by Muhammad Siddique Prihar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City