مِلے گی شیخ کو جٙنت

Poet: پنڈت ہری چند اختر
By: Abdul Jabbar, Islamabad

مِلے گی شیخ کو جٙنت، ہمیں دوزخ عطا ہوگا
بٙس اِتنی بات ہے جِس کے لئے مٙحشر بٙپا ہوگا

رہے دو دو فرشتے ساتھ اب اِنصاف کیا ہوگا
کِسی نے کُچھ لکھا ہوگا کِسی نے کُچھ لِکھا ہوگا

با روزے حشر حاکمِ قادرِ متلعق خدا ہوگا
فرشتوں کے لِکھے اور شیخ کی باتوں سے کیا ہوگا

تیری دُنیاں میں صبر وہ شُکر سے ہمنے بسر کر لی
تیری دُنیاں سے بڑھ کر بھی تیری دوزخ میں کیا ہوگا

سکونِ مستقل دل بے تمنا شیخ کی صحبت
یہ جنت ہے تو اِس جٙنت سے دوزخ کیا بُرا ہوگا

میرے اشعار پر خاموش ہے جز بز نہیں ہوتا
یہ واعظ واعظوں میں کُچھ حقیقت آشنا ہوگا

بھروسہ کِس قدر ہے تجھ کو 'اختر' اُس کی رحمت پر
اگر وہ شیخ صاحب کا خُدا نِکلا تو کِیا ہوگا..

Rate it:
05 Feb, 2020

More Religious Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Abdul Jabbar
Visit 4 Other Poetries by Abdul Jabbar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City