نیند آنکھوں ہی آنکھوں میں کٹتی گئی پو بھی پھٹتی گئی

Poet: Fakhira Batool
By: Ahmad, khi

اس کو بھولے بنا کوئی چارہ نہیں وہ ہمارا نہیں
عشق اک بار ہے یہ دوبارہ نہیں وہ ہمارا نہیں

کوئی پھولوں سے خوشبو کو آ کے چنے کوئی گجرے بنے
یہ محبت ہے اس میں خسارہ نہیں وہ ہمارا نہیں

نیند آنکھوں ہی آنکھوں میں کٹتی گئی پو بھی پھٹتی گئی
یاد کرتے رہے پر پکارا نہیں وہ ہمارا نہیں

کوئی شکوہ نہیں آشنائی نہیں جگ ہنسائی نہیں
بس ہمیں اس سے ملنا گوارا نہیں وہ ہمارا نہیں

ہم تو کہتے ہیں وہ بھی جلے آگ میں درد کے راگ میں
کوئی تشبیہ نہ استعارہ نہیں وہ ہمارا نہیں

عشق ناشاد ہے عشق برباد ہے عشق فریاد ہے
اس سمندر کا کوئی کنارہ نہیں وہ ہمارا نہیں

چاند سورج ستارے وہی آسماں کچھ نہیں درمیاں
کوئی شکوہ شکایت اشارہ نہیں وہ ہمارا نہیں

بیتی یادوں کو دل سے بھلانا پڑا لوٹ جانا پڑا
اپنا اس شہر میں اب گزارہ نہیں وہ ہمارا نہیں

یہ کہانی ہماری تمہاری بھی ہے آہ و زاری بھی ہے
کوئی جیتا نہیں کوئی ہارا نہیں وہ ہمارا نہیں

Rate it:
06 Feb, 2020

More Fakhira Batool Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Owais Mirza
Visit Other Poetries by Owais Mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City