وباِ ناسور

Poet: Bushra Babar
By: Bushra Babar, islamabad

دلوں میں خوف چھایا ہے
اِک وباِ ناسور کے آنے سے

اب تک غفلت میں گزری تھی
اب جا کے کہیں ہوش آیا ہے

اب ترک ِ جماعت جو لازم ہے
توبھاگ کے مسجد جاتے ہیں

شب و روز اذانیں دیتے ہیں
اب رب کو راضی کرنے کو

اس وبا کے ختم ہونے پر
اس وقت کو نہ بُھلا دینا

اور تم ناراضگی ِخدا دیکھو
نعمتِ طواف بھی چھن گی ہم سے

خدایا معلوم سب کو ہے
یہ صلہِ نتائج ِ اعمال ہے

اور خدا سے امیدِخاص ہے
یہ وبا بھی ٹل ہی جائے گی

نہیں ہے حوصلہ اب ہم میں
کہ کچھ بھی اور سہہ پائیں

بس تو راضی ہم سے ہو مولا
یہ عرض سب کی ہے مولا

تو سب کو معاف کر دے اب
اور اس وبا کو ٹال دے اب

Rate it:
08 Apr, 2020

More Religious Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Bushra Babar
Visit 70 Other Poetries by Bushra Babar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City