ہنستے ہوئے ماں باپ کی گالی نہیں کھاتے

Poet: منور رانا
By: Hassan, Karachi

ہنستے ہوئے ماں باپ کی گالی نہیں کھاتے
بچے ہیں تو کیوں شوق سے مٹی نہیں کھاتے

تم سے نہیں ملنے کا ارادہ تو ہے لیکن
تم سے نہ ملیں گے یہ قسم بھی نہیں کھاتے

سو جاتے ہیں فٹ پاتھ پہ اخبار بچھا کر
مزدور کبھی نیند کی گولی نہیں کھاتے

بچے بھی غریبی کو سمجھنے لگے شاید
اب جاگ بھی جاتے ہیں تو سحری نہیں کھاتے

دعوت تو بڑی چیز ہے ہم جیسے قلندر
ہر ایک کے پیسوں کی دوا بھی نہیں کھاتے

اللہ غریبوں کا مددگار ہے راناؔ
ہم لوگوں کے بچے کبھی سردی نہیں کھاتے

Rate it:
18 Feb, 2021

More Munawwar Rana Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Hamariweb
Visit Other Poetries by Hamariweb »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>