آزادي شمشير کے اعلان پر

Poet: علامہ اقبالBy: Umair Khan, Peshawar

سوچا بھي ہے اے مرد مسلماں کبھي تو نے
کيا چيز ہے فولاد کي شمشير جگردار

اس بيت کا يہ مصرع اول ہے کہ جس ميں
پوشيدہ چلے آتے ہيں توحيد کے اسرار

ہے فکر مجھے مصرع ثاني کي زيادہ
اللہ کرے تجھ کو عطا فقر کي تلوار

قبضے ميں يہ تلوار بھي آجائے تو مومن
يا خالد جانباز ہے يا حيدر کرار

Rate it:
Views: 871
13 Aug, 2021