لکھنا نہیں آتا تو میری جان پڑھا کر

Poet: علامہ اقبالBy: راحیل, Karachi

لکھنا نہیں آتا تو میری جان پڑھا کر
ہو جاے گی تیری مشکل آسان پڑھا کر

پڑھنے کے لئے اگر تجھے کچھ نہ ملے تو
چہروں پے لکھے درد کے عنوان پڑھا کر

لاریب ، تیری روح کو تسکین ملے گی
تو کرب کے لمحات میں قرآن پڑھا کر

آ جاے گا تجھے اقبال جینے کا قرینہ
تو سرورِ قونین کے فرمان پڑھا کر

Rate it:
Views: 2338
17 Dec, 2021