تمام ناخدا ساحل سے دور ہو جائیں

Poet: تہذیب حافیBy: zawar, Gharo

تمام ناخدا ساحل سے دور ہو جائیں
سمندروں سے اکیلے میں بات کرنی ہے
 

Rate it:
Views: 1065
30 Mar, 2021