فنون لطیفہ

Poet: علامہ اقبالBy: Anila, Islamabad

اے اہل نظر ذوق نظر خوب ہے لیکن
جو شے کی حقیقت کو نہ دیکھے وہ نظر کیا!

مقصود ہنر سوز حیات ابدی ہے
یہ ایک نفس یا دو نفس مثل شرر کیا!

جس سے دل دریا متلاطم نہیں ہوتا
اے قطرۂ نیساں وہ صدف کیا وہ گہر کیا!

شاعر کی نوا ہو کہ مغنی کا نفس ہو
جس سے چمن افسردہ ہو وہ باد سحر کیا!

بے معجزہ دنیا میں ابھرتیں نہیں قومیں
جو ضرب کلیمیؑ نہیں رکھتا وہ ہنر کیا!

Rate it:
Views: 417
13 Aug, 2021