کرتے نہیں خود کو واقف نعمتوں سے

Poet: مبشر احمد خٹکBy: مبشر احمد خٹک, Karachi

کرتے نہیں خود کو واقف نعمتوں سے
سمجھتے ہو مسلم یہ کیسے مسلماں ہو

ہے دھول سے بھر پور آج قرآن
کرتے نہیں مطالعہ یہ کیسے مسلماں ہو

چھینا نہیں کسی نعمت کو اس نے اب تک
پھر بھی نا فرماں ہو یہ کیسے مسلماں ہو

رہتے ہو کیوں دور تم سجدوں سے
اس سے واقف نہیں یہ کیسے مسلماں ہو

ارے رہتی ہے فکر نماز میں کاروبار کی
سوچتے کہا اور جھکتے کہا کیسے مسلماں ہو

کب کاٹنے کو آۓ گی خٹک تمہیں فکر محشر
نہیں ہے خوف قبر کا یہ کیسے مسلماں ہو

Rate it:
Views: 215
17 Nov, 2021