قلم اٹھتا ہے تو سوچیں بدل جاتی ہیں

Poet: Seemab bint e AqilBy: Student Poetry in Urdu, Cati

قلم اٹھتا ہے تو سوچیں بدل جاتی ہیں
اک شخص کی محنت سے ملتیں تشکیل پاتی ہیں

کیا خوب تھا وہ شخص جس نے دنیا کو بتایا
کس طرح غوروفکر سے بےنام قوم نام پا جاتی ہیں

گر لکھنے بیٹھوں تو بہت کچھ لکھوں اس ذات پر
جس پڑھنے کے لیے ہر صاحب فہم کو بےچین پاتی ہوں

دعاگو ہوں اپنے لیے اپنے رب کریم سے

ہے اگر جائز تمنا میری تو قبول کر
مجھ کو بھی اقبال جیسی فہم و فراست نصیب کر

Rate it:
Views: 15367
16 Nov, 2015