اے فرعونِ وقت تُو نے بہت ستایا ہے

Poet: ازقلم وسیم ارشدBy: ایاز, Rawalpindi

اے فرعونِ وقت تُو نے بہت ستایا ہے
ہر ساعت رعایا پہ اک نیا ظلم ڈھایا ہے

تڑپ رہی ہو گی لحد میں روح اقبال کی
جیسے تُو نے خودی کا تماشہ بنایا ہے

اے مسیحائی کے دعوے دار یہ تو بتا
جو بار اُٹھا نہیں سکتا تھا کیوں اُٹھایا ہے

بدعنوان سینہ ٹھوک کے پھر رہے ہیں
تُو نے مفلسوں کو سولی پہ لٹکایا ہے

تف تری سیاست پہ تف ترے منشور پہ
تُو نے قوم کے جذبات کا مذاق اُڑایا ہے

سمیٹ اپنی تبدیلی کے بیج اور چلتا بن
اُخوت ترا شیوا نہیں تو نفرت لے کر آیا ہے

صاحبِ اقتدار ہو کے جو بے بس ہے وسیم
اُسے دیکھو تو دیوار سے کس نے لگایا ہے

Rate it:
Views: 364
22 Jan, 2022