اک زخمی پرندے کی طرح جال میں ھم ھیں

Poet: منور راناBy: عاقب عرفان, karachi

اک زخمی پرندے کی طرح جال میں ھم ھیں
اے عشق ابھی تک تیرے جنجال میں ھم ھیں

ھنستے ھوئے چہرے نے بھرم رکھا ھمارا
وہ دیکھنے آیا تھا کہ کس حال میں ھم ھیں

اب آپ کی مرضی ھے سنبھالیں نہ سنبھالیں
خوشبو کی طرح آپ کے رومال میں ھم ھیں

میں پھوٹ کہ رونے لگا جب موت کے ڈر سے
نیکی نے کہا نامۂ اعمال میں ھم ھیں

اک خواب کی صورت ہی سہی، یاد ہے اب تک
ماں کہتی تھی لے اوڑھ لے اس شال میں ہم ہیں

Rate it:
Views: 1430
03 Dec, 2021