انجان ہو تم جن باتوں سے

Poet: Dr Zuhaib Arshad
By: Dr Zuhaib Arshad, Multan

انجان ہو تم جن باتوں سے
چلو آج تمہیں بتلاتے ہیں

جب آن پڑے مشکل کوئی
ہم پل پل ساتھ نبھاتے ہیں

ہم جان ہتھیلی پر تھامے
حالات سے نہ گھبراتے ہیں

جب جنگ ہو سانسیں دینے کی
ہم موت سے بھی لڑ جاتے ہیں

نم آنکھیں یہ ہو جاتی ہیں
دل خون کے آنسو روتا ہے

جب اشک سنبھالے پلکوں پے
کوئی پھول سا اپنا کھوتا ہے

اپنی تو دعا ہے یہ رب سے
ہر زخم سبھی کا سل جائے

کوئی دنیا میں بیمار نہ ہو
آرام سبھی کو مل جائے

درد کے مارے لمحوں میں
ہم آنکھ بچا کے روتے ہیں

تم لکھ کہو پتھر لیکن
انسان تو ہم بھی ہوتے ہیں

جذبات چھپا کر سینے میں
امراض سے لڑتے رہتے ہیں

ہم پتھر جیسے لوگوں کو
کچھ لوگ مسیحا کہتے ہیں

Rate it:
18 Jan, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Dr Zuhaib Arshad
Visit 3 Other Poetries by Dr Zuhaib Arshad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City