انسان، احساسات اور جذبات

Poet: جہانزیب احمد
By: Jahanzaib Ahmed, Karachi

غصے میں رعب دار لگتا ہے
تو خوف میں معصوم لگتا ہے

کیونکہ انسان احساسات اور جذبات کی مورت ہے

نفرت کرے تو ابلیس کی مانند لگتا ہے
خوش رہے تو کھلے گلاب کی مانند لگتا ہے

کیونکہ انسان احساسات اور جذبات کی مورت ہے

اداس رہے تو پنجرے میں بندھ پرندہ لگتا ہے
حیرت سے دیکھے تو گود میں پڑھا طفل لگتا ہے

کیونکہ انسان احساسات اور جذبات کی مورت ہے

توہین اگر کرے کوئی تو آگ بگولہ ہوجاتا ہے
محبت کرے کوئی تو پگھلی موم بن جاتا ہے

کیونکہ انسان احساسات اور جذبات کی مورت ہے

قدر کرو ہر کسی کے ہر جذبات کی اے انسان
کیونکہ بے جذبات، بے احساس جہانزیب بھی ایک پتھر کی مورت ہے

Rate it:
17 Jan, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Jahanzaib Ahmed
Visit Other Poetries by Jahanzaib Ahmed »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City