حسرتیں ہیں اور دل نا کام ہے

Poet: Hasan Shamsi
By: F.H. Siddiqui, Lucknow ( India )

حسرتیں ہیں اور دل ناکام ہے
یہ محبت کا مری انجام ہے

کوئی غیبت ہے ، نہ یہ دشنام ہے
شیخ بس اک ناصح ناکام ہے

تلخیوں معں بھی چھپی ہیں مستیاں
“ پیجئے تو زندگی اک جام ہے “

کن گناہوں کی سزا ہے یا خدا
بستئ تو حید میں کہرام ہے

بن گئے ہیں وہ مسیحا قوم کے
جن کے سر پر قتل کا الزام ہے

منتظر ہیں واں پہ بھی منکر نکیر
مر بھی جاؤں تو کہاں آرام ہے

مدح خوان حسن ہیں یاں اور بھی
کیوں ‘ حسن ‘ ہی مو رد الزام ہے
 

Rate it:
03 Dec, 2014

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: F.H.SIDDIQUI
*Social science teacher and trainer

.. View More
Visit 158 Other Poetries by F.H.SIDDIQUI »

Reviews & Comments

بن گئے ہیں وہ مسیحا قوم کے
جن کے سر پر قتل کا الزام ہے
بہت عمدہ شعر ہے اور بڑی حد تک حقیقت کے قریب تر بھی۔ ایک بہت اچھی غزل پیش کرنے پر آپ کو مبارک باد دے رہی ہوں قبول کریں

By: Sara Afzal, Pakistan on Dec, 06 2014

Shukria mohtarma Sara Afzal saheba . Allah aapko salamat rakkhe .
By: F.H.SIDDIQUI, Lucknow on Dec, 10 2014
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City