دل سے دل تک

Poet: M R Sagar
By: M R Sagar, bhakkar

کچھ انجانے رستے
اور کچھ خواب سہانے
جن کو پانے کیلیئے رتجگوں کے ہزار لمحے
کچھ تھکے ہوئے آنسو
جو پلکوں پہ رکے رہے دیر تک
کہ جن کو پینا بھی آسان نہیں
اور کھونا بھی آسان نہیں

رات کی تنہائیاں
اور دن کے بے شمار لہجے
جو ایسے ثبت ہیں اس زندگی پہ نقش ہیں
کہ جن کو مٹانا بھی آسان نہیں

بکھری زلفیں بکھری سوچیں
بکھری ہر اک چیز کے ساتھ
منزل کے تعاقب میں
ننگے سر اور ننگے پاؤں
صدیوں سے اک سفر میں رہتے

بالآخر بات یہاں تک پہنچی
ماتھے پہ سوچ کی سلوٹیں اور
بالوں میں چاندی اتری ہے
پھر بھی اک سراب ہے منزل
اب تو ایک عزاب ہے منزل

Rate it:
18 Jun, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: M R Sagar
Visit Other Poetries by M R Sagar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City