سمندر دہر، جیون کو سفینہ جانتے ہیں

Poet: UA
By: UA, Lahore

سمندر دہر، جیون کو سفینہ جانتے ہیں
طوفانوں کے مقابِل ہو کہ جِینا جانتے ہیں
ااَلَم دنیا کے دنیا سے چھپا کر جی رہے ہیں
وہی شاید کہ جِینے کا قرینہ جانتے ہیں
ہماری روح تک جِنکو رسائی مِل گئی ہے
خدا جانے ہمیں وہ کیوں نگینہ جانتے ہیں
جو چشمِ دِل کے آئیننے سے دنیا دیکھتے ہیں
وہی دراصل جٰینے کا قرینہ جانتے ہیں
وہ اپنے دِل کی ساری باتیں مجھ سے کہتے ہیں
وہ میرے دِل کو رازوں کا دفینہ جانتے ہیں

Rate it:
16 Dec, 2019

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: uzma ahmad
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
Visit 3206 Other Poetries by uzma ahmad »

Reviews & Comments

اَلَم دنیا کے دنیا سے چھپا کر جی رہے ہیں

وہ اپنے دِل کی کہانی مجھ ہی سے کہتے ہیں

By: Uzma, Lahore on Jan, 07 2020

خدا جانے وہ ہمیں کیوں نگینہ جانتے ہیں

By: UA, Lahore on Dec, 18 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City