مجھے قرطاس کو رنگوں سے بھرنے کا ہنر بخشا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, Malaysia

میں اس زندانِ دنیا میں کبھی گمنام پھتر تھی
میں اپنی آنکھ میں چبھتا ہوا بے نام کنکر تھی

مجھے اس نے محبت سے تراشا کردیا گوہر
مجھے احساس کے درپن سے اس نے دے دیا جو جوہر

مجھے قرطاس کو رنگوں سے بھرنے کا ہنر بخشا
مجھے سوچوں کو لکھنے کا سلیقہ اور سخن بخشا

مجھے تہنائیوں کے وار کو سہنا سکھایا تو
مجھے ہونے کا اپنے اک حسیں احساس بھی بخشا

میں اپنا جسم و جاں ایمان اس پر وار دالوں گی
میں اپنی ہر خوشی اس کی خوشی پر وار ڈالوں گی

اسے اپنی محبت کی حسیں تر وادی جاں میں
عبادت کی طرح چاہ کر اسے شاداب گردوں گی
میں اس کے نام اپنی زندگی کا باب کر دوں گی
 

Rate it:
25 Feb, 2016

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: وشمہ خان وشمہ
I am honest loyal.. View More
Visit 4712 Other Poetries by وشمہ خان وشمہ »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City