کوٸی امید ، بَر نہیں أتی

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

کوٸی امید ، بَر نہیں أتی
جمہوریت کہیں ، نظر نہیں أتی

پہلے دِکھتی تھی کبھی جھلک
اب نظر ، یکسر نہیں أتی

فوج کی حدیں تو معین ہیں
یہ حدود میں ، مگر نہیں أتی

أمریت ہی کیوں طاقت کے بل بوتے
شریعت کیوں زور ، پر نہیں اتی

کہوں سلیکٹڈ تو مراد تو ہی ہے
یہ مثال کسی اور ، پر نہیں أتی

یوں تو فوج معتبر ہے مگر
یہ بات مُنہ ، بھر نہیں أتی

خوفِ جاں نے لب سی رکھے ہیں
ورنہ کیا بات ، کر نہیں أتی

مدینہ کس مُنہ سے جاٶ گے اخلاق
مخالفت قادیانیوں کی ، گر نہیں أتی

Rate it:
08 Dec, 2019

More Political Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 111 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City