یقین کا سورج

Poet: سمیرا ایم۔ ایس۔سایحہ
By: Sumaira M. S. Saaiha, Karachi, Pakistan

چھوڑو نہ اس نیند کو دیکھو تو نکلتے سورج کو
ؓؓبھلادو نہ گذری باتوں کو
دیکھو نہ اس نئے دن کو
مٹادو نہ ماضی کے سخت لہجوں کو
کیا رکھا بھلا اس بجھی بجھی سی راکھ میں

جگادو نہ اپنے مردہ دل کو
سمجھاؤ، سجا لو پھر سے اک نئی منزل کی اور
دیکھو نہ نکلتا سورج دکھا رہا ہے اک نئی راہ
دیکھو نہ نکلتی اس کی شعاعوں کو
جو دھو رہی ہیں دل کے داغوں کو
جوڑ رہی ہیں بوسیدہ شکستہ دلوں کو

زندگی جو جلتی موم بتی کی طرح پگھل رہی ہے
خزاں رسیدہ پتوں کی ما نند بکھر رہی ہے
بچا لو وقت ہے اب بھی سمیٹ لو
ہمت پکڑ لو
خدا تمہارے ساتھ ہے
ذرا اک بار یقین تو کرلو
 

Rate it:
04 May, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Sumaira M. S. Saaiha
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City