یہ دل یہ پاگل دل میرا کیوں بجھ گیا آوارگی

Poet: محسن نقویBy: Aqib, Islamabad

یہ دل یہ پاگل دل میرا کیوں بجھ گیا آوارگی
اس دشت میں اک شہر تها وہ کیا ہوا آوارگی

کل شب مجهے بے شکل کی آواز نے چونکا دیا
میں نے کہا تو کون ہے؟ اس نے کہا آوارگی

اک تو کہ صدیوں سے مرے ہمراہ بهی ہمراز بهی
اک میں کہ ترے نام سے نا آشنا آوارگی

اک اجنبی جھونکے نے جب پوچها مرے غم کا سبب
صحرا کی بھیگی ریت پر میں نے لکها آوارگی

یہ درد کی تنہایاں یہ دشت کا ویراں سفر
ہم لوگ تو اکتا گئے اپنی سنا آوارگی

لوگو بهلا اس شہر میں کیسے جیئں گے ہم جہاں
ہو جرم تنہا سوچنا لیکن سزا آوارگی

کل رات تنہا چاند کو دیکها تها میں خواب میں
محسن مجهے راس آئیگی شاید سدا آوارگی

Rate it:
Views: 1567
28 Sep, 2021