سچ بول کر مجھ کو شکست ہوئی

Poet: واجد نبی
By: Wajid Nabi, Karachi

عجب اک ناشناسی ہے اس کی باتوں میں
جیسے مجھ کو اب بھلایا جا رہا ہے
بنا کر منصوبہ میرے قتل کا
مجھے دعوت پر بلایا جا رہا ہے
عجیب بات ہے کہ تیرا نام لیکر
میرے دل و جاں کو جلایا جا رہا ہے
اے دل ذرا درمیاں سے ہٹ تو سہی
آج میرا صبر آزمایا جا رہا ہے
سچ بول کر مجھ کو شکست ہوئی
اب مجھ کو جھوٹ سکھایا جا رہا ہے
یہاں پیاس سے لوگ مرتے ہیں روز
وہاں سڑکوں پر خون بہایا جا رہا ہے
کچھ نہیں دل تو یونہی اداس ہے
غم میں مسکرایا جا رہا ہے
آج دوستوں کی فہرست سے
میرا نام مٹایا جا رہا ہے
 

Rate it:
15 Oct, 2019

More Urdu Ghazals Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Wajid Nabi
Visit 14 Other Poetries by Wajid Nabi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City