تری طرف سے کوئی بھی پیام آیا نہیں

Poet: وشمہ خان وشمہ By: وشمہ خان وشمہ, Karachi

 تری طرف سے کوئی بھی پیام آیا نہیں
دعا تو دور ہے اب تک سلام آیا نہیں

مجھے تو تجھ پہ یقیں تھا بھرے زمانے میں
مگر یہ دکھ ہے مرے تو بھی کام آیا نہیں

اجڑ گئے ہیں ترے بعد حسرتوں کے محل
کوئی بھی شمع جلانے غلام آیا نہیں

اسے تو سوچا مکمل تھا ہر گھڑی میں نے
وہ آدھا حصے میں آیا تمام آیا نہیں

کسی کے عشق کا ایسا نشہ چڑھا مجھ پر
کہ عقل و ذہن میں کوئی کلام آیا نہیں

تمام عمر سفر میں گزر گئی وشمہ
چلی تھی جس کے لیے وہ مقام آیا نہیں

Rate it:
Views: 118
30 Jul, 2022
Related Tags on Life Poetry
Load More Tags
More Life Poetry
Popular Poetries
View More Poetries
Famous Poets
View More Poets