گُردوارہ کرتارپور فوٹوشوٹ: برانڈ کےبعد ماڈل نےبھی معافی مانگ لی

image

کرتارپور گوردارے کے احاطے میں فوٹو شوٹ سے سکھوں کے مذہبی جذبات مجروح ہونے پر ماڈل نے معافی مانگ لی۔

گزشتہ روز کرتار پور گوردارے کے احاطے میں خاتون ٹک ٹاکر کی ماڈلنگ اور فوٹو شوٹ کی تصاویر سامنے آئی تھی جس پر انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور اپنی اس حرکت پر معافی مانگنے کا مطالبہ بھی کیا گیا۔

پاکستانی ماڈل صالحہ نے اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر’سوری‘ کی تصویر شیئر کرتے ہوئے کیپشن میں لکھا کہ ’میں نے اپنے اکاؤنٹ پر ایک تصویر اپ لوڈ کی جو کسی فوٹو شوٹ کا حصہ نہیں تھی بلکہ میں نے سکھ کمیونٹی کے مقدس مقام کرتار پور کا دورہ کیا تھا‘۔

ماڈل صالحہ نے مزید لکھا کہ تصاویر اپ لوڈ کرنے کا مقصد کسی کی دل آزاری کرنا نہیں تھا لیکن میری اس حرکت سے اگر کسی کو تکلیف پہنچی تو میں ان تمام لوگوں سے معافی مانگتی ہوں اور میں سکھ ثقافت کی قدر وعزت کرتی ہوں۔

انہوں نے کہا میں نے لوگوں کو تصاویر بناتے ہوئے دیکھا تو میں نے اپنی تصاویر بھی بنوالی جب کہ میں نے وہاں موجود سکھ برادری سے تعلق رکھنے والے لوگوں کو بھی تصاویر بنائی۔

اتوارکو منت کلاتھنگ نامی برانڈ کی جانب سے فوٹو شوٹ اپلوڈ کیا گیا جو گزشتہ روز سوشل میڈیا پر وائرل ہوا جس کے بعد منت کلاتھنگ نامی برانڈ کے اس فیشن شوٹ کو قابل اعتراض قراردیا گیا، سکھ برداری کی جانب سے کہا گیا تھا کہ دربارصاحب میں ننگے سر ماڈلنگ سے ان کے مذہبی جذبات کو مجروح کیا گیا۔

فیشن برانڈ کی جانب سے یہ فوٹو شوٹ ‘ بلیس فرائیڈے سیل ‘ کی تشہیر کرتے ہوئے کپڑوں کی قیمتوں میں 50 فیصد کمی کا بتانے کیلئے اپ لوڈ کیا گیا تھا جس میں گلابی رنگ کے کپڑوں میں ملبوس ماڈل کو گُردوارہ کی مرکزی عمارت کے سامنے احاطے میں بیٹھا دیکھا جاسکتا تھا۔

سوشل میڈیا پرتنقید کا سامنا کرنے کے بعد ‘منت کلاتھنگ’ کی جانب سے آفیشل انسٹاپیج پرسے تمام تصاویرہٹاتے ہوئے معاملے پرمعذرت کی گئی ہے تاہم اب ان کا انسٹاگرام اکاونٹ بھی ڈیلیٹ کردیا گیا ہے۔

برانڈکی جانب سے معافی مانگتے ہوئے واضح کیا گیا ہے کہ مذکورہ تصاویر کسی فیشن شوٹ کا حصہ نہیں ہیں بلکہ انہیں ان تصاویرمیں موجود فیشن بلاگرکی جانب سے مہیاکی گئی تھیں، جنہیں بعد ازاں انسٹاگرام پراپ لوڈ کیا گیا۔

اسی معاملے پر رویندرسنگھ روبن نامی بھارتی ایک ٹوئٹر صارف نے بھی اپنی ٹویٹ میں کہا کہ گُردوارہ کرتارپورصاحب کے احاطے میں خاتون نے ماڈلنگ کرکے سکھوں کے مذہبی جذبات مجروح کیے اور پھریہ تصاویرسوشل میڈیا پربھی شیئرکی گئیں، تاہم رویندرسنگھ روبن کی ٹویٹ کو ری ٹویٹ کرتے ہوئے وفاقی وزیراطلاعات ونشریات فواد چوہدری نے اپنی ٹوئٹ میں لکھا کہ ڈیزائنراور ماڈل کو سکھ کمیونٹی سے معافی مانگنی چاہیے، یہ ایک مذہبی مقام ہے نہ کہ کسی فلم کا سیٹ۔


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
تازہ ترین خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.