پیٹرول سستا کرنے کا حل ڈھونڈ لیا گیا

image

پیٹرولیم مصنوعات کی بڑھتی ہوئی عالمی قیمتوں سے نمٹنے اور عوام کو سہولت پہنچانے کے لیے جہاں دنیا بھر کے ممالک مختلف اقدامات اٹھا رہے ہیں، وہیں پاکستانی حکمراں آئی ایم ایف کے اشاروں پر صرف پیٹرولیم ہی نہیں بلکہ روز مرہ استعمال کی اشیا کو بھی عوام کی پہنچ سے دور کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔

پاکستان میں اس وقت پیٹرول کی قیمت 148 روپے فی لیٹر ہے، جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل 145 روپے اور مٹی کا تیل 117 روپے لیٹر فروخت ہورہا ہے۔

ہر 15 دن میں پیٹرول کی قیمت تواتر سے بڑھائی جارہی ہے اور اس میں کمی کا کوئی امکان نظر نہیں آرہا، نہ ہی حکومت کوئی اقدام کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

Advertisement ایک طرف جہاں پاکستان کی موجودہ حکومت عوام کو مہنگائی کے دلدل میں دھنسائے جارہی ہے، وہیں جاپانی حکومت نے اپنے عوام کو سہولت دینے کے لیے ہر حد تک جانے کو تیار ہے۔

جاپان کے وزیر صنعت کویچی ہاگیوڈا نے منگل کو کہا کہ حکومت پہلی بار اپنے تیل کی صنعت کے سبسڈی پروگرام کو نافذ کرے گی، جس کا مقصد تیل کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کے بعد اس ہفتے کے آخر میں شروع ہونے والے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو بڑھنے سے روکنا ہے۔

ہاگیوڈا نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ ملک کی اوسط ریگولر پیٹرول کی خوردہ قیمت پیر تک 170.2 ین فی لیٹر تھی، جو 13 سالوں میں اپنی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی اور نومبر میں متعارف کرائی گئی سبسڈی اسکیم کو شروع کرنے کے لیے درکار 170 ین کی حد سے اوپر ہے۔

پروگرام کے تحت، تیل کے 29 تقسیم کاروں اور درآمد کنندگان کو جمعرات سے شروع ہونے والے ہفتے کے لیے 3.4 ین فی لیٹر کی سبسڈی دی جائے گی، جس کا مقصد انہیں پیٹرول، ڈیزل آئل، مٹی کے تیل اور ایندھن کے تیل کی قیمتوں میں تیزی سے اضافہ روکنا ہے۔

 وزارت پیٹرولیم کی جانب سے کہا گیا کہ “جہاں تک پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا تعلق ہے، علاقائی فرق دیکھا گیا ہے، لیکن میں توقع کرتا ہوں کہ یہ پروگرام تھوک قیمتوں میں اضافے کو دبائے گا اور ہر علاقے میں قیمتوں میں مزید تیزی سے اضافے کو روکے گا۔”

Square Adsence 300X250


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.