آئینِ عشق

Poet: Haroon Alfaaz
By: Haroon Alfaaz, Lahore

عِشق کا ع آئین بنا آئین تحت سزا ہوئی
سزا ہوئی کہ ایسی ہوئی ساری زندگی تباہ ہوئی
مَگر اب تو ڈر سا لگتا ہے کہیں ایسا نہ ہو جائے
سبھی کو عِشق کرنا ہو
کسی کو پہر سے پہلے، کسی کو شام سے پہلے
کسی کو کام کے دوراں، کسی انجام سے پہلے
ہاں قاضی کو بھی کرنا ہو،کسی احسان سے پہلے
جو عزت دار کرتا ہے، کسی الزام سے پہلے
بیمارے عِشق ہو جاو، کسی بھی مرض سے پہلے
تم نے بھی تو کیا ہو گا، کسی خود غرض سے پہلے
جیسےضمانت مانگی ہو،کسی بھی قرض سے پہلے
کسی رکوع سے پہلے، کسی بھی فرض سے پہلے
سبھی کو عشق کرنا ہو، غمِ حَیات سے پہلے
کسی کو اَجل سے پہلے، کسی الفاظ ؔ سے پہلے

Rate it:
05 Sep, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Haroon Alfaaz
Visit 6 Other Poetries by Haroon Alfaaz »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City