اب دیکھ لو پاؤں میں زنجیر بھی نہیں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, منیلا

تیغ و سپر نہیں ہے کوئی تیر بھی نہیں
اب دیکھ لو کہ پاؤں میں زنجیر بھی نہیں

زادِ سفر میں کھو دیا اپنے وجود کو
اس بار ہاتھ میں تری تصویر بھی نہیں

شعر و سخن کی بزم سجائی تو ہے مگر
غالبؔ نہیں ہے آج کوئی میؔر بھی نہیں

ماری گئی ہوں اعدا کے لشکر میں بے خطا
میری طرف سے دوستو! تقصیر بھی نہیں

مجھ سے تو شب کے خوف کا عالم نہ پوچھئے
جگنو نہیں ہے بستی میں شب گیر بھی نہیں

وشمہ وطن سے دور میں پردیس آ بسی
آنکھوں میں آج خواب کی تعبیر بھی نہیں

Rate it:
14 Sep, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4593 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City