اداس راتوں میں اگر وہ یاد آۓ تو کیا کروں میں۔۔

Poet: ثوبیہ زمان
By: Sobia Zaman, Faisalabad

اداس راتوں میں اگر وہ یاد آۓ تو کیا کروں میں
سرد پہروں میں دل میرا ہی مجھے جلاۓ تو کیا کروں میں؟

اگر وہ آۓ تو ایسا ہو گا، اگر نہ آۓ تو ویسا ہو گا
وہ لوٹ آۓ تو کیا کروں گی؟ اگر نہ آۓ تو کیا کروں میں؟

بہت سے وعدے، بہت سی یادیں، یہ سب اسی کی نوازشیں ہیں
یونہی پیمانے نوازشوں کے، زمانے بھر میں اگر لٹاۓ تو کیا کروں میں؟

وہ میری آنکھوں سے خود کو دیکھے تو جان پاۓ مقام اپنا
وہ شخص میری زندگی ہے، سمجھ نہ پاۓ تو کیا کروں میں؟


اسے خبر تھی کہ وہ نہ ہو گا تو دل بڑا ہی ویران ہو گا
کوئی بنا کر بہت ہی اپنا یوں دور جاۓ تو کیا کروں میں؟
 

Rate it:
03 Jan, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Sobia Zaman
Visit 4 Other Poetries by Sobia Zaman »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City