اک ہم ہیں کہ سالوں سے کھڑے ہیں

Poet: Ayesha Arshad Khokhar
By: Ayesha Arshad Khokhar, Satrah Sialkot

اک ہم ہیں کہ سالوں سے کھڑے ہیں
اک تم ہو کہ جانے کی رٹ لگا رکھی ہے

تم تو پل میں ہر تعلق توڑ دو
یہ ہم ہیں کہ اب تک نبھا رکھی ہے

یہ بے وفائی بھی تم ہی کو مبارک
ہم نے تو وفا کی قسم کھا رکھی ہے

نہیں بھولیں گیں تیرا یہ تلخ لہجہ
ہم نے د ل میں ہر بات چھپا رکھی ہے

دنیا کو چھوڑو بس اپنی بات کرو تم
ہم نے بھی بہت دنیا آزما رکھی ہے

Rate it:
28 May, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Ayesha Arshad Khokhar
Visit Other Poetries by Ayesha Arshad Khokhar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City